2022 Latest News Press Releases

ڈپٹی ڈائریکٹر میانوالی کی کرپشن ثابت ہو جانے کے باوجود محکمہ کاروائی کرنے سے گریزاں

انصاف کے  لیےآواز اٹھانے والی بہادر خاتون پروفیسر کے خلاف کاروائی واہ رئے ہائر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ

حق کےلیے آواز بلند کر نے پر اتحاد اساتذہ  کے  دوستوں کےخلاف انتقامی کارروائیاں

پرنسپل جی سی میانوالی کی اے سی آرز خراب کر دی دوسروں کی اے سی کونٹر سائن نہیں کرتا

مخالفین کی ڈاک فارورڈ نہیں کرتا عہدے سے ہٹا کر قرار واقعی سزا دی جائے اتحاد اساتذہ

میانوالی ( نامہ نگار ) ڈپٹی ڈائریکٹر کالجز ہائر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ میانوالی ضلع بھر کے کالج اساتذہ کے لیے فرعون بنا ہوا ہے سال 2020 میں کچھ عرصہ اس کے پاس گورنمنٹ کالج میانوالی کے پرنسپل کا چارج بھی رہا ایک سال سے زیادہ عرصہ گزر جانے کے باوجود اساتذہ کی اے سی آرز لکھنے سے  گریزاں ہے۔۔۔  موجودہ پرنسپل گورنمنٹ کالج میانوالی سمیت جن دو ٹیچرز کی اے سی آرز  لکھی ہیں  انہیں بلا جواز ایڈورس کر دیا۔۔۔ ان دو پروفیسر صاحبان نے جب اس کے خلاف ریپرزنٹیشن کی تو اسے فارورڈ کرنے سے گریز کرتا رہا عام شکایت ہےکہ لوگوں کےجی فنڈ ایڈوانس کے کیسز متعلقہ آفیسز کو فارورڈ نہیں کیے جاتے ۔۔۔۔ سال 2020 میں پروموٹ ہونے والے ڈیفرڈ اسسٹنٹ پروفیسر صاحبان کی سینیارٹی کے کیسز اگست 2021 سے دبا کے رکھے ہوئے ہیں۔۔۔ اس سارے منظر کے پس منظر میں ایک واقعہ ہے گورنمنٹ کالج برائے خواتین عیسیٰ خیل ضلع میانوالی میں ایک خاتون پرنسپل تعینات ہوئیں تو انہوں نے ڈپٹی ڈائریکٹر کالجز میانوالی میاں محمد ساجد کی طرف سے گورنمنٹ کالج برائے خواتین عیسی خیل کے مالی معاملات میں ماضی میں کی جانے والی بعض بد عنوانیوں کی نشاندھی کر دی چار سرکاری رہائش گاہوں پر مشتمل ایک عمارت کو بغیر کسی اجازت کے گرایا گیا اور اس کے ملبے کو خرد برد کر دیا گیا موصوف نے سیاسی اثر رسوخ استعمال کرتے ہوئے،  نشاندھی کرنے والی خاتون کے خلاف محکمہ کے افسران کے سامنے غلط بیانی کی اور  جھوٹے بے بنیاد الزامات لگائے جس پر جناب سیکریٹری صاحب نے اس خاتون پرنسپل کو او ایس ڈی بنا کر لاہور سیکریٹریٹ رپورٹ کرنے کا حکم دے دیا۔۔۔ پی پی ایل اے نے جب اپشو کو اٹھایا تو کمشنر سرگودھا ڈویژن نے انکوائری کروائی ڈپٹی کمشنر میانوالی اور ڈائریکٹر ہائر ایجوکیشن سرگودھا ڈویژن کی انکوائری میں یہ ثابت ہوا کہ ڈپٹی ڈائریکٹر کالجز میانوالی میاں ساجد سنگین مالی بے ضابطگیوں کے مرتکب ہوئے ہیں ۔۔۔۔ جس کی باضابطہ انکوائری رپورٹ 27-09-2021 کو محکمہ ہائر ایجوکیشن کو بھجوا دی گئی۔۔۔ جس میں میں ڈپٹی ڈائریکٹر کالجز میانوالی میاں محمد ساجد کے خلاف مالی بدعنوانی کے چارجز کے تحت  پیڈا ایکٹ 2006 کے تحت کارروائی کی سفارش کی گئی تھی۔ اتنے ماہ گزر جانے کے باوجود محکمہ ہائر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ نے نہ تو اس شخص کو عہدے سے برطرف کیا اور نہ کوئی اور ضابطے کی کارروائی کی یہ بات زبان زد عام ہے کہ ہائر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ اور حکومت  کی  اہم ترین شخصیات کی موصوف کو پشت پناہی حاصل ہے اور جو بھی کر لے کوئی ان کا کچھ نہیں بگاڑ سکتا اثحاد اساتذہ نے اس کا سنجیدگی سے نوٹس لیا ہے اور ارباب اختیار سے مطالبہ کیا ہے کہ حالات کو بگاڑ سے بچانے کے لیے ڈپٹی ڈائریکٹر مذکورہ کو فی الفور عہدے سے ہٹایا جائے اور قرار واقعی سزا دی جائے۔

Related posts

یونیورسٹیوں میں وائس چانسلر کی تعیناتی کا عمل چھ ماہ پہلے شروع کیا جائے ۔گورنر پنجاب

Ittehad

سیکرٹری بورڈز کی چار اور کنٹرولر بورڈ کی سات آسامیاں خالی۔خواہشمند اپلائی کریں

Ittehad

فخر اساتذہ پروفیسر مرزا اطہر بیگ کا پرائیڈ آف پرفارمینس کیلیے چناو

Ittehad

Leave a Comment