2020 Akhbaar Latest News

شازیہ انور ڈکیتی کیس کے ملزمان کا گرفتار نہ ہونا پنجاب پولیس کی نااہلی کا منہ بولتا ثبوت ہے

اتنے روز گزرنے کے باوجود ساہیوال پولیس پروفیسر شازیہ انور  اور انکے اہل خانہ کو یرغمال بنا کر لاکھوں روپے کے قیمتی سامان کو لوٹنے والے ڈاکوں کو تاحال گرفتار نہیں کر پائی یہ پنجاب پولیس کی کارکردگی پر منہ بولتا ثبوت ہے اور حکومت وقت  سے سوال ہے کہ عوام کے اربوں روپے جن اداروں پر خرچ کیے جاتے ہیں ان کی کارکردگی کا یہ عالم ہے کہ ایک گنجان آباد شہر میں ایک خاتون کو لوٹنے کی باقاعدہ پلاننگ کی جاتی ہے اور وقوعہ کے روز کئی میل اس کا پیچھا کیا جاتا ہے گھر پہنچ کر اس کے ساتھ گھر میں گھس کر ان کو اور ان کے دیگر اہل خانہ کو یرغمال بنا یا جاتا ہے اور سارے شہر کی پولیس سوئی رہتی ہے آج کے دور میں کافی حیران کن ہے یاد رہےکہ کوئی  آٹھ دس  روز قبل گورنمنٹ کالج برائے خواتین ساہیوال کی اسسٹنٹ پروفیسر محترمہ شازیہ انور کو کالج سے گھر واپسی پر غنڈوں نے پیچھا کیا اور گھر پہنچ کر اسلحہ کے روز پر انہیں اور ان کے اہل خانہ کو یرغمال بنا لیا اور سارے گھر کا قیمتی سامان اور نقدی چھین کر فرار ہوگئےایک ہفتہ سے زائد ہونے کو ہے مگر ابھی تک پولیس ملزمان کو گرفتار نہیں کر پائی اتحاد اساتذہ کی ساہیوال کی پوری قیادت ضلعی انتظامیہ سے مکمل رابطے میں ہے اور ارباب اختیار سے  

Related posts

  پنجاب پبلک سروس کمیشن نے لیکچررز کی دو سو ستانوے آسامیاں مشتہر کر دیں 

Ittehad

سجاد سلیم ہتیانہ کو چیرمین پنجاب پبلک سروس کمیشن کا عارضی چارج دے دیا گیا

Ittehad

دس فروری کوگھیراو کی کال واپس وعدوں کی تکمیل کے لیے مزید 23 فروری تک وقت

Ittehad

Leave a Comment